Tera chehra yell dill dharka rha hai

ترا چہرہ یہ دل دھڑکا رہا ہے
ترا لہجہ بھی دل الجھا رہا ہے

اچانک سے ہوا محسوس مجھ کو
مری محفل کوئی مہکا رہا ہے

مرے ہمدم تری یادوں کا جگنو
نہ جانے کیوں مجھے تڑپا رہا ہے

تمہارے بعد دل پر زخم اُبھرا
وہ اب تک مجھ کو تو ڈستا رہا ہے

محبت بھی عجب اک شے ہے یارو
جو اس میں ڈھل گیا جلتا رہا ہے

غزل کے رنگ میں پھر آج دیکھو
نیا اک گیت کوئی گا رہا ہے

فراقِ یار میں نعمتؔ یہاں پر
“دیا سا رات بھر جلتا رہا ہے“

 

محمد نعمت اللہ برہارویؔ 

برہارا بابوبرہی مدہوبنی بہار 

موبائل  9709715015

 

Facebook Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published.